438

دہشتگردی سے متاثرہ بچے ،آرٹ کے زریعے امن کی خواہش کا اظہار

باڑہ پریس کلب کے زیر اہتمام پرائیوٹ سکولوں کے بچوں کے درمیان آرٹ کے مقابلوں کا انعقاد کیا گیا جس میں تیس سے زیادہ بچوں نے حصہ لیا ۔فروری 2015 ء کو دہشت گردی کے خلاف آپریشن کے وجہ سے بے گھر لوگوں کے واپسی کے بعد یہ پہلا اپنے نوعیت کا تقریب تھا۔

“امن اور ترقی “کے ا عنوان پر بچوں نے پنسل اور رنگوں کے کا استعمال سے اپنے علاقے کے ماضی ،حال اور مستقبل کو بغیر لفظوں کے بیان کرنے کی کوشش کرائی تھی ۔

باڑہ پریس کلب کے صدر حیال مت شاہ آفریدی کے مطابق بچوں کے درمیان آرٹ کے مقابلوں کا توقع سے کئی گنا زیادہ مثبت ردعمل سامنے آئی جس میں طلبہ کے علاوہ استاتذہ اور علاقے کے سماجی کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔اُن کے بقول بدامنی سے متاثر بچے اپنے علاقے کا مستقبل کیسے دیکھنا چاہتے ہیں جبکہ مستقبل میں کلب میں علاقے کے نوجوانوں کے لئے مثبت سرگرمیوں کا انعقاد کیا جائیگا۔

نیشل کالج آف آرٹس لاہور کے گریجوٹ اور آرٹ مقابلوں کے جج عفار آفریدی نے بتایا کہ بچوں کے ڈرائینگ سے بخوبی یہ اندازہ ہوتا ہے کہ وہ علاقے میں خوشحالی اور سکون سے زندگی گزارنا چاہتے ہیں کیونکہ ان بچوں نے جنگ ، نقل مکانی اور تعلیم سے دوری جیسے مشکل حالات خود دمشاہدہ کرچکے ہیں۔

کئی بچوں نے ٹوٹی ہوئی کلاشنکوف جوکہ دہشت گردی سے نفرت اور فاختہ کو ہوا میں اُڑتے ہوئے بنائے اوربعض نے ایک پرامن وخوشحال زندگی کوپنسل اور رنگوں سے کاعذ کے چاٹ پر اس اُمید کے ساتھ بنائے کہ وہ ملک کے دوسرے شہریوں کے برابر خوشحال زندگی گزرنا چاہتے ہیں۔ پوری تقریب کو علاقے کے سماجی اورچائینہ زلمی کے مالک حاجی جہانزیب خان آفریدی اور شہید صحافی محبوب شاہ فاونڈیشن کے مالی معاونت جبکہ دیگر انتظامات میں علاقے کے سطح آرٹ کے ترقی کے لئے کام کرنے والے تنظیم گاف نے ذمہ داری سنبھالی۔

آرٹ کے مقابلوں میں پوزیشن لینے والے بچوں میں تحائف ، نقد انعامات اور تعریفی اسناد تقسیم کیں گئے۔عنقریب گورنمٹ سکولز کے بچوں کے لئے بھی اس قسم کے سرگرمی کاانعقاد کیا جائیگا جبکہ تیسرے مرحلے میں دونوں پوزیشن حاصل کرنے والے طالبہ کے درمیان فن مصوری کا مقابلہ ہوگا۔

Share this story
  • 39
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
    39
    Shares

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں